Tuesday, 9 September 2014

اہل مغرب کا طرزفکر و تحقیق

اہل مغرب کا طرزفکر و تحقیق کا طرہءامتیاز ۔۔۔۔ محض تشکیک ہے...
شک میں ڈالنا ہرچیزمیں شک... یہاں تک کہ اپنی ذات میں بھی شک. . .
آپ نےدیکھا ہوگا کہ بہت ساروں کے پسندیدہ جملے کچھ اس طرح ہوتے ہیں کہ . . . . .

 " میں کچھ نہیں، میں نہیں جانتا کہ میں کیا ہوں، میں کون ہوں،کیا ہوں؟؟؟، وغیرہ وغیرہ . . .
 ایسے لوگ متاثرین_مغرب ہیں۔۔۔
... ان چلتے پھرتے،کھاتے پیتے،لوگوں کو پلر کےساتھ ٹکر دے کر پوچھنا چاہیے کہ اب بتاؤ "کچھ ہو یا نہیں؟؟؟... .
مذہب کےبارے میں بھی شکوک و شبہات اسی وجہ سے پیدا ہوتے ہیں. . .
اسلام کےبارے میں مطالعہ سرسری ہوتاہے،یاہوتابھی نہیں. . .
اور پڑجاتے ہیں مغربی فلسفےمیں. . . نتیجتا "منفی سوچ" کاگفٹ وصول کرکے صاحب بہادر اسلام کےبارے میں تحقیق کابیڑہ اٹھا لیتے ہیں اور پھر...
اسلام کی اساسی تعلیمات ہی کےبارے میں شکوک و شبہات کاشکارہوکرانکارکربیٹھتے ہیں. . . . . خسرالدنیا والآخرۃ. . .

No comments:

Post a Comment